بجلی بنڑاوݨ پاروں ایندھن ڊی لاگت اچ کمی

نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) دی طرفوں جاری تھیوݨ والے اعداد و شمار اچ آکھا گئیا ھِ کہ بجلی دی پیداوار پاروں ایندھن دی لاگت پچھلے مہینے دے مقابلے اچ فروری اچ ٢٨ل٥ فیسد کمی دے نال ٨۔٠١ روپے فی یونٹ تھئی گئی ھِ جو سال ھا سال لاگت اچ ١٠ اعشاریہ ٣ فیصد کمی ھِ

اخباری رپورٹ دے مطابق عارف حبیب لمیٹڈ دے ریسرچ ھیڈ طاہر عباس آکھیا کہ ایندھن دی لاگت اچ کمی ھائیڈل دی بنیاد تے بجلی دی پیداوار ٣٩ اعشاریہ ٢ فیصد سالانہ اضافہ دی وجہ نال تھئی ھِ جیندے کیتے ایندھن دی لوڑ نی ھوندی۔

انہاں آکھیا کہ فروری اچ بجلی دی پیداوار اچ ھائیڈل دا حصہ ٢٦ اعشاریہ ٥ فیصد تھئی گئیا ھِ جو ایں مہینے توں پہل ٩ اعشاریہ ٤ فیصد تے ھک سال اچ ١٨ اعشاریہ ٢ فیصد ھا۔ رپورٹ دے مطابق نیو کلیئر بجلی دی پیداوار وی سستی رھی ھِ جیندے اچ سالانہ بنیاد تے ٨٦ فیصد اضاف تھئیا ھِ ایں طرح ایندھن دی لاگت اچ مجموعی طور تے کمی آ گئی ھِ

 

خبر اردو میں

نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) کی جانب سے جاری اعداد و شمار میں کہا گیا ہے کہ بجلی کی پیداوار کے لیے ایندھن کی لاگت پچھلے مہینے کے مقابلے میں فروری میں 28.5 فیصد کمی کے ساتھ 8.01 روپے فی یونٹ ہوگئی ہے جو سال بہ سال لاگت میں 10.3 فیصد کمی ہے۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق عارف حبیب لمیٹڈ کے ریسرچ ہیڈ طاہر عباس نے کہا کہ ایندھن کی لاگت میں کمی ہائیڈل کی بنیاد پر بجلی کی پیداوار میں 39.2 فیصد سالانہ اضافے کی وجہ سے ہوئی ہے، جس کے لیے ایندھن کی ضرورت نہیں ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ فروری میں بجلی کی پیداوار میں ہائیڈل کا حصہ 26.5 فیصد ہوگیا ہے جو اس سے ایک ماہ قبل 9.4 فیصد اور ایک سال قبل 18.2 فیصد تھا۔

رپورٹ کے مطابق نیوکلیئر بجلی کی پیداوار بھی قدرے سستی رہی ہے جس میں سالانہ بنیاد پر 86 فیصد اضافہ ہوا ہے اور اس طرح ایندھن کی لاگت میں مجموعی طور پر کمی آگئی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *